94

شب معراج…. راز و نیاز کی باتیں

شب معراج…. راز و نیاز کی باتیں

معراج النبی صلی اللہ علیہ والہ والسلم ایک مسلمہ حقیقت ہے جس کا ذکر قرآن مجید میں موجود ہے، رب العالمین اور محبوب رب العالمین کے درمیان ہونے والی گفتگو کے بارے میں یقین سے تو کچھ نہیں کہا جا سکتا مگر شاید……..

اللہ تعالیٰ جو معبود برحق اور رب العالمین ہے اس ذات کو سلامتی کی ضرورت نہیں اس لئے نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ والسلم نے اپنے رب کریم کی بارگاہ میں حاضری کی گھڑی شاید یہ فرمایا ہو، *التَّحِیَّاتُ لِلّٰہِ وَالصَّلَوٰتُ وَالطَّیِبَاتُ* تمام قولی، فعلی اور مالی عبادتیں اللہ ہی کے لیے ہیں..

رب العزت نے اپنے محبوب اور پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ والہ والسلم کو عرش معلی آمد پر *اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ اَیُّہَاالنَّبِیُّ وَرَحْمَۃُ اللّٰہِ وَبَرَکَاتُہْ* اے نبی صلی اللہ علیہ والہ والسلم! آپ پر سلام، اور اللہ کی رحمتیں اور برکتیں ناَزل ہوں کہہ کر خوش آمدید کہا ہو….

شاید سدرۃ المنتہی کے اس پار اسی دوران فرشتوں کی صفوں سے کچھ اس طرح آواز بلند ہوئی ہو، *اَلسَّلَامُ عَلَیْنا وَعَلٰی عِبَادِ اللّٰہِ الصّٰلِحِیْنَ،* ہم پر اور اللہ تعالیٰ کے. نیک بندوں پر بھی سلام ہو…

پھر شاید گفتگو کچھ اس طرح آگے بڑھی ہو کہ پیارے آقا صلی اللہ علیہ والہ والسلم نے رب تعالیٰ کے یکتا معبود ہونے کی گواہی *اَشھَدُ اَنْ لَّا اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ* میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں فرما کر دی ہو … اور رب العالمین نے *وَاشھَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُہُ وَرَسُوْلُہْ* اور میں گواہی دیتا ہوں کہ محمد صلی اللہ علیہ والہ والسلم بندے اور رسول ہیں کہہ کر رسول کریم صلی اللہ علیہ والہ والسلم کی رسالت اور بندگی پر مہر ثبت کر دی ہو…

بے شک پاک ہے وہ ذات جو آپ صلی اللہ علیہ والہ والسلم کو مسجد حرام سے مسجد اقصٰی اور پھر مسجد اقصٰی سے عرش معلی تک لے گئی اور اس دوران دروازے پر لگی کنڈی بھی رکنا بھول گئی.

واللہ اعلم بالصواب

سید فرحان الحسن

#ShabeMairaajMubarak

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں