81

پاکستان کی بے گھر ماؤں کا گھر۔۔۔۔بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن

زندگی میں یوں تو ہر رشتہ اپنا لگ مقام اور حیثیت رکھتا ہے مگر والدین کا مقام  ہماری زندگی میں سب سے بلند اور ممتاز ہے۔والدین میں بھی ماں کا درجہ باپ سے بلند ہے۔کیا ہی خوش نصیب اولاد ہو گی جو والدین کو ان کی ضعیفی میں ویسی کی توجہ و محبت دے جو انھوں نے بچپن میں اولاد کو دی تھی۔

       لیکن یہ بھی ایک تلخ حقیقت ہے کہ معاشرے میں ایسے بھی ضعیف افراد موجود ہیں جن کی دیکھ بھال کرنے والا کوئی رشتہ ان کی پاس موجود نہیں ہے۔ایسے افراد پورے معاشرے کی ذمہ داری ہوتے ہیں۔معاشرے سے ہی کچھ خدا ترس لوگ آگے آتے ہیں اور ان بے گھر اور بےسہارا لوگوں کا سہارا بنتے ہیں۔

بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن پاکستان کی  ایک ایسی ہی غیر سرکاری اور غیر نفع بخش تنظیم ہے ۔یہ بزرگ شہریوں اورصنف کی بنیاد پر تشدد کا شکار بننے والے افراد (خصوصاًخواتین) کو پناہ فراہم کرتی ہے۔

یہ تنظیم سرکار ی فاؤنڈیشن کے تحت حکومت پاکستان کے ساتھ رجسٹرڈ ہے۔

بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن کی چیئر پرسن و بانی مسزفرزانہ  شعیب پاکستان کی ایک قابل فخر بیٹی ہیں ۔خدمت کے جذبے سے سرشار مسز فرزانہ پاکستان کی بے گھر ماؤں کو صرف رہنے کی جگہ نہیں بلکہ ایک ایسا گھر فراہم کرنے کے لئے کوشاں ہیں جہاں یہ مائیں خود کو بے یارو مددگار نہ محسوس کریں۔

 اس فاؤنڈیشن کا بنیادی مقصد بے گھر بزرگ ، نظرانداز بزرگ شہریوں کی دیکھ بھال کرناہے۔ایسے بزرگ افراد بالخصوص خواتین  جو معاشرے میں تنہا ہیں  ۔ وہ اپنی زندگی کے  بقیہ دن غربت ، بدحالی اور بیماری میں گزار نے  پر مجبورہیں۔ بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن ایسے افرادکی امید ہے۔کراچی ، لاہور اور باراکوہ ، اسلام آباد میں بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن کے مراکز بے گھر خواتین کا گھر ہے۔

بنتِ فاطمہ فاؤنڈیشن میں سینئر شہریوں کو ان کی ضروریات کے مطابق رہائش فراہم کرتے ہیں جس کا دورانیہ مختصر مدت(3ماہ سے 6ماہ)،حالات کی بحالی تک  یا طویل مدت تک  ہوسکتا ہے  ۔

       بنت ِ فاطمہ فاؤنڈیشن مخیر پاکستانیوں کی امداد سے چلنے والا ادارہ ہے۔روزانہ کی بنیاد پر رہائشی سہولیات،خوراک،لباس اور ادویات فراہم کرنا کوئی آسان کام نہیں۔ہزاروں بے گھر  بے سہارا اور
مائیں ہماری توجہ کی منتظر ہیں۔
https://bfoldhome.org/about-us/

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں