86

شہریوں کی بے احتیاطی اور کرونا وائرس: وزیراعظم نے فوج طلب کرلی

شہریوں کی بے احتیاطی اور کرونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز وزیراعظم نے فوج طلب کرلی۔ عالمی وباء کرونا وائرس کی وجہ سے پچھلے ایک سال میں لاکھوں زندگیاں لقمہ اجل بنیں۔

پاکستان میں اس وائرس کی پہلی لہر سے اب تک ایس او پیز اور احتیاطی تدابیر کے باعث اموات اور کیسز کی شرح قدرے کم تھی۔

لیکن کرونا وائرس کی تیسری لہر انتہائی خطرناک اور جان لیوا ثابت ہو رہی ہے۔ اور اس ہی کے ساتھ ہی شہریوں کی لاپرواہی اور بے احتیاطی میں بھی اضافہ ہوا۔

جمعہ کے روز عمران خان نے این سی او سی کی میٹنگ کے بعد شہریوں کی لاپرواہی کی وجہ سے فوج طلب کرلی۔

وزیراعظم نے پاک فوج سے اپیل کی کہ وہ  ایس او پیز پر عمل کرانے میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مدد کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ

ہم لوگوں سے احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کا کہہ رہے ہیں پر عوام انتہائی غیر زمہ دارانہ سلوک اپنائے ہوئے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ایس او پیز پر عمل کریں۔ آدھے سے زیادہ مسئلہ صرف ماسک پہنے سے حل ہو سکتا ہے۔

  1. وزیراعظم نے فوج طلب کرلی

بھارت میں پنجے گاڑھتے کرونا وائرس اور خطرناک صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اگر ہم نے احتیاط نہ کی تو بہت جلد ہماری صورتحال بھی بھارت جیسی ہوگی۔

 این سی او سی کی نئ ہدایات کے مطابق:

  • وہ تمام اسکول عید تک بند رہیں گے جن اضلاع میں کرونا کی شرح 5% سے زیادہ ہو۔
  • تمام دکانیں 6 بجے تک بند کر دی جائیں گی۔
  • تمام ریسٹورنٹ سے صرف کھانا پارسل کرانے کی اجازت ہوگی۔
  • آفس کے اوقات دوپہر 2 بجے تک ہونگے۔
  • آفس میں صرف 50% حاظری ہوگی۔

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ میں نہیں چاہتا کہ ملک میں مکمل لاک ڈاؤن لگایا جائے۔ مکمل لاک ڈاؤن سے سب سے زیادہ تنخواہ دار طبقہ متاثر ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ میری عوام سے اپیل ہے جس طرح آپ نے گزشتہ سال ایس او پیز پر عمل کیا اس سال بھی عمل کریں۔

آپ نے یہاں تک کہ رمضان میں مساجد تک بند کیں اسی طرح  اب بھی حکومت کا ساتھ دیں۔

وزیراعظم کی فوج طلب کرنے کے بعد ہی پاک فوج نے اسلام آباد میں چارج سنبھال لیا ہے۔ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جارہی ہے۔

کئ دکانوں کو سیل کر دیا گیاہے۔ جبکہ کئ پر بھاری جرمانہ عائد کیا گیا۔

وزیراعظم کی فوج سے اپیل کے بعد پنجاب حکومت نے بھی فوج طلب کرلی ہے۔ سندھ کے سوا تمام صوبے فوج طلب کر سکتے ہیں۔ وزیر داخلہ کا نوٹیفکیشن جاری۔

اس وقت ملک میں کرونا وائرس کے کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ ملک کے 80% آکسیجن بیڈز بھر چکے ہیں۔ گزشتہ گھنٹوں میں ملک میں اموات تاریخی سطح 158 تک پہنچ گئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں