62

ہیٹ ویو سمندری طوفان تاؤتے: وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے ریڈ الرٹ جاری

شہر قائد کو ہیٹ ویو اور سمندری طوفان تاؤتے کا سامنا۔ وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے صوبے بھر میں خاص اقدامات اور ریڈ الرٹ جاری۔

پی ایم ڈی کے مطابق کراچی میں 17 مئ تک ہیٹ ویو کا خطرہ ہے۔ شہر قائد میں پارہ 40۔ سے 44  سیلسیس تک جانے کا خدشہ۔

اس کے علاوہ بحیرہ عرب میں بننے والے سائیکلون اور سمندری طوفان تاؤتے کے باعث صوبے بھر میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے زیرِ صدارت ہونے والے اجلاس میں ڈائریکٹر میٹ سردارسرفراز نے اجلاس کو بریفنگ میں بتایا کہ ایک ویدر سسٹم بحیرہ عرب کے جنوب میں بن رہا ہے جسے سائیکلون تاؤتے کا نام دیا گیا ہے ۔

ہیٹ ویو سمندری طوفان تاؤتے: وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے ریڈ الرٹ جاری

ڈائریکٹر میٹ نے بتایا کہ اس سائیکلون کے 3 طرح کے اثرات ہوتے ہیں ۔ طوفانی بارشیں ،تھنڈر اسٹورم یا تیز ہوائیں،جس کو ہائی انٹینسٹی ونڈ زکہا جاتا ہے۔

سردارسرفراز نے بتایا کہ اگر ہوا کی رفتار 27-22 کٹس ہوتی ہے تو مٹی کا طوفان ہوگا، اگر ہوا کی رفتار 33-28 کٹس بنتی ہے تو درختوں کو نقصان ہوسکتا ہےاور اگرہوا کی رفتار 47-34 کٹس ہوتی ہے تو گھروں کی چھتوں اور فصلوں کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے۔

لیکن ابھی دیکھنا یہ ہے کہ اگر یہ طوفان انڈیا گجرات کو عبور کرتا ہے تو ٹھٹھہ بدین سانگھڑ میر پور میں 80 کلو میٹر پی ایچ بارشیں ہو سکتی ہیں۔ سے100

اگر یہ طوفان توکتے کراچی کے عربی علاقے سے کراس کرتاہے تو کراچی حیدرآباد اور جامشورو ڈسٹرکٹ میں شدید طوفانی بارشیں ہو سکتی ہیں۔

اس حوالے سے وزیر اعلیٰ نے صوبے بھر میں ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔  صوبے کے تمام ڈپٹی کمشنرز کو مراسلہ جاری کردیا گیا ہے۔ جس میں انتظامیہ کو ہنگامی اقدامات کرنے اور ایمرجنسی کے دوران تمام اسٹاف اور عملے کو ‏ڈیوٹیوں پر حاضر رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ایمرجنسی کے دوران سندھ پولیس ، اسپتالوں میں اسٹاف ، پی ڈی ایم اے چوبیس گھنٹے اپنے ‏فرائض انجام دیں گے۔

اس کے علاوہ صوبے بھر میں سینٹرل کنٹرول سیل قائم کر دیے ‏گئے۔ کنٹرول سیل آئی جی ، رینجرز، محکمہ صحت، پی ڈی ایم اے، کمشنر سےرابطےمیں رہےگا۔ ‏سینٹرل کنٹرول سیل سےعوام کےلئےبھی ضروری ہدایات جاری کی جائیں گی۔

ادھر کے ایم سی کی جانب سے تمام سائن بورڈز  اور بل بورڈز کو فوری ہٹانے کا حکم دے دیا گیا ہے۔کسی بھی جانی و مالی نقصانات سے بچنے  کے لیے تمام سائن بورڈز ہٹانے ہوں گے، بصورتِ دیگر بل بورڈز مالکان ذمہ دار ہونگے۔

ماہی گیروں کو سمندری طوفان تاؤتے کی وجہ سے 20مئ تک گہرے سمندر میں جانے اجازت نہیں ہوگی۔

ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے سمندری طوفان کےپیش نظر مختلف برساتی نالوں کا دورہ ‏کیا، محکمہ میونسپل سروسزمیں 20 مئی تک ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔ ‏

15 سے20 مئی کےدوران تمام افسران و عملےکی چھٹیاں منسوخ رہیں گی۔ نالوں کےچاکنگ پوائنٹس ‏فوری طورپر کھولنے اور برساتی پانی کانکاس بہتر بنانے کی ہدایت کی گئی ہے

واٹر بورڈ محکمہ کو بھی الرٹ رہنے نکاسی آب کو کنٹرول کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ کراچی ائیر پورٹ پر بھی ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔ ایئر سائیڈ مینجر کی جانب سے ہائی الرٹ جاری۔ ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے سرکلر جاری کردیا گیا۔

چھوٹے طیاروں، روٹری ونگ اور ہیلی کاپٹر کے ساتھ  اضافی وزن لگانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

عوام سے اپیل کی گئی ہے کہ براہ کرم جتنا ہو سکے گھر میں رہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں