91

“عورت گردی”ریلیز سے پہلے ہی متنازعہ

اداکارہ جویریہ سعود کی فیمنسٹ فلم عورت گردی 4 جون کو اردو فلیکس پر نشر کی جائے گی۔لیکن فلم کے ٹریلر نے ابھی سے فلم کو متانزعہ بنادیا ہے۔اگرچہ اس سے فلم کی مشہوری میں اضافہ ہی ہوگا مگر متنازعہ موضوع کی وجہ سے ٹریلر پر منفی ردعمل زیادہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔

فلم “عورت گردی” میں مرکزی کردار پاکستان کی منجھی ہوئی ادکارہ جویریہ سعود ادا کر ہی ہیں جبکہ ان کے سامنے علی خان ہیں ۔علی خان پاکستان شو بز کی ایسی شخصیت ہیں جو تعارف کی محتاج نہیں۔فلم کے پروڈیوسر فرحان گو ہر ہیں۔

 فلم کا ٹریلر جویریہ سعود کی گہری آواز کے ساتھ شروع ہوتا ہے ۔”یہ لڑائی اب لڑائی نہیں  رہی جنگ میں بدل گئی ہے۔”ساتھ ہی متنازعہ نعرے اور احتجاج”میرا جسم میری مرضی”کی کلپس دکھائے گئے ہیں۔

اس کے بعد کے مناظر بھی سامعین کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں لیکن عورت مارچ کے مناظر اس ٹریلر کو متنازعہ بنا رہے ہیں۔واضح رہے کہ پاکستان میں عورت مارچ کو بہت مخالفت کا سامنا کرنا پڑا۔اکثریت کی رائے میں عورت مارچ نے پاکستان کی عام عورت کی مسائل کو اجاگر کرنے کے بجائے فحاشی و عریانی کو اجاگر کیا ہے۔یہ ہی وجہ ہے کہ فلم میں عورت مارچ کی مناظر نے سامعین میں “عورت گردی”کے لئے ایک منفی سوچ پیدا کی ہے۔

ٹریلر میں جویریہ سعود کو ایک مضبوط عورت کے روپ میں دکھایا گیا ہے جو مردوں کےخلاف آواز بلند کرتی نظر آتی ہیں جبکہ اداکار علی خان ان مخالفت کرتے نظر آتے ہیں۔فلم میں سیاست کی داو پیچ دکھائے ہیں ۔اب دیکھنا یہ ہے کہ فلم کے آخر میں عورت کی جیت ہوتی ہے یا ہار۔
https://en.dailypakistan.com.pk/20-May-2021/aurat-gardi-s-trailer-gets-bashed-by-the-netizens

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں