Eid Desserts 124

میٹھی عید کے میٹھے پکوان: کیا میٹھا بنائیں اس عید پر؟

خوشی کا موقع ہو اور گھر میں میٹھا نہ بنے؟ نا ممکن سی بات ہی لگتی ہے۔ میٹھی چیز کو خوشی کی علامت سمجھا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ عید کے پُر مسرت موقع پر بہت سی روایات میں سے ایک روایت یہ بھی ہے کہ ہر گھر میں مزیدار میٹھے پکوانوں کی مہک پھیلی ہوتی ہے۔ عید نماز کے بعد سب مل کر میٹھا کھاتے ہیں اور خوشیاں مناتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہمسایوں میں بھی یہ میٹھا بھیجا جاتا ہے۔ یہ روایت صدیوں سے چلی آ رہی ہے اور نسل در نسل منتقل ہوتی رہی ہے۔ آج ہم آپ کے ساتھ چند خاص اور روایتی مٹھائیوں کا ذکر کرنے جا رہے ہیں جو عید کے موقع پر سب سے زیادہ پسند کی جاتی ہیں۔

میٹھے پکوان

دودھ سویّاں

کہنے کو تو یہ ایک سادہ سا پکوان ہے مگر جب خلوص کی چاشنی اس میں رس گھولتی ہے اور محبت کی آنچ پہ یہ پکتا ہے تو پھر کھانے کی میز پر خوشیوں کا ابال بھی آتا ہے۔ دودھ میں سویاں ڈال کر ہلکی آنچ پر پکایا جاتا ہے اور تھوڑا سا گاڑھا ہونے تک سویاں نرم ہو جاتی ہیں تو ان کو اتار لیا جاتا ہے۔ ٹھنڈا کرنے کے بعد حسبِ ذائقہ خشک میوہ جات سے سجا کر پیش کیا جاتا ہے۔ یہ پاکستان کے مقبول ترین میٹھے پکوانوں میں سے ایک ہے۔

دودھ سویّاں

کھیر

کھیر پاکستانی روایتی میٹھے پکوانوں میں سے ایک ہے۔ کھیر بنانا جتنا مشکل ہے، اس کا ذائقہ اتنا ہی دلپسند اور مزیدار ہے۔ ہلکی آنچ پر دودھ میں چاولوں کو پکایا جاتا ہے یہاں تک کہ وہ دودھ میں گھل جاتے ہیں۔ کھیر پکانے کیلئے کافی وقت درکار ہوتا ہے مگر اس کی مقبولیت اور ذائقہ اس سے کہیں زیادہ ہے۔ ٹھنڈا کرنے کے بعد حسبِ ذائقہ خشک میوہ جات سے سجایا جاتا ہے۔

کھیر

رس ملائی

رس ملائی ایک بہت خاص مٹھائی ہے جو بہت پسند کی جاتی ہے۔ اس کے نام کی طرح اس کے دو حصے ہیں۔ ایک رس یعنی گاڑھا کیا ہوا دودھ اور دوسرا ملائی جس سے مراد لڈو کی طرح کی مٹھائی ہے اس رس (دودھ) میں ڈالی جاتی ہے۔ پہلے دودھ میں میٹھا ڈال کر اسے پکا کر گاڑھا کر لیا جاتا ہے۔ پھر لڈو بنانے کیلئے پنیر سے مدد لی جاتی ہے۔ یہ پنیر آپ بازار سے بھی لا سکتے ہیں اور گھر میں بھی بنایا جا سکتا ہے۔ پنیر کو پیس کر آٹے کی شکل میں گوندھا جاتا ہے اور پھر ان کے لڈو بنا کر دودھ میں بھگو لیا جاتا ہے۔ ٹھنڈا کر کے پیش کیا جاتا ہے۔

رس ملائی

فالودہ

فالودہ ایک نہایت آسان اور نہایت مزیدار چیز ہے۔ اس کی سب سے خاص بات یہ ہے کہ اس کے ایک سے زیادہ اقسام کے ذائقے بنائے جا سکتے ہیں۔ اپنے من پسند پھل کو گرائنڈر میں ڈال کر اس کا فالودہ بنا لیں۔ چاہیں تو اس کو گاڑھا کرنے کیلئے تھوڑی کریم بھی ڈال لیں۔ برتن میں سب سے نیچے اس پھل کے ٹکڑے ڈال لیں۔ اس کے اوپر باریک سی تہہ جامِ شیریں کی ڈالیں۔ پھر اوپر پھلوں کا فالودہ ڈالیں اور آخر میں پھر پھل کے چھوٹے کٹے ہوئے ٹکڑے ڈال لیں۔ لیجیے آپ کا میٹھا فالودہ تیار۔ ٹھنڈا کریں اور شوق سے کھائیں۔

فالودہ

کسٹرڈ

سب سے آسان اور جلدی تیار ہونے والا میٹھا کسٹرڈ ہے۔ بڑوں اور بچوں میں برابر مقبول ہے۔ اس کو کئی طریقوں سے تیار کیا جاتا ہے۔ چاہیں تو خالی کسٹرڈ بنا کر ٹھنڈا کر لیں اور خشک میوہ جات سے سجا کر پیش کریں۔ یا پھر کسٹرڈ، جیلی اور پھلوں کی تہیں سجا بنا کر اس کا مزہ دوبالا کر لیں۔ تہہ دار کسٹرڈ کیلئے سب سے نیچے کیک کی تہہ لگائیں۔ اس کے اوپر کسٹرڈ کی تہہ ڈالیں۔ پھر اپنے من پسند پھلوں کو چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹ کر اس کے اوپر ڈالیں۔ پھر جیلی کی ایک تہہ لگائیں۔ اس کے اوپر پھر کسٹرڈ لگائیں۔ اس پر بسکٹ، چاکلیٹ، یا پھلوں سے سجا کر ٹھنڈا کر لیں اور شوق سے کھائیں۔

کسٹرڈ

تو یہ تھے پانچ روایتی میٹھے پکوان۔ اس کے علاوہ آپ مختلف طرح کے کیک بھی بنا سکتے ہیں۔ تو پھر آپ اس عید پر کیا بنا رہے ہیں؟ کمنٹس میں ہمیں بتائیے گا ضرور!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں